بسنت

اب ایک نقصان دہ تہوار

 بسنت کا تہوار کہاں سے اخذ ہوا؟ اسکی بنیاد کس نے بسنت کا تہوار کہاں سے اخذ ہوا؟ اسکی بنیاد کس نے رکھی؟یہ لوگوں کو اب کس طرح نقصان پہنچا رہا ہے اور کیسی صورت اختیار کر چکا ہے؟ بسنت ایک روایتی تہوار ہے جس کی جڑیں ہندو اور سکھ ثقافت میں پیوست ہیں۔ اسکا ماخذ یہی دو قومیں ہیں۔ دراصل یہ پنجاب کے علاقہ جات میں گندم کی کٹائی کے موقع پر منایا جانے والا تہوار تھا۔ اس وقت پنجاب متحدہ ہندوستان میں ایک ہی ضلع ہوتا تھاجس میں ہندو، سکھ، مسلمان ایک ساتھ رہتے تھے۔ البتہ حقیقت یہ تھی کہ یہ ہندوؤں اور سکھوں کا قائم کردہ تہوار تھا جو کہ انہی کی ثقافت سے تعلق رکھتا ہے۔ آزادی حاصل کرنے کے بعد ہم نے الگ ملک تو قائم کر لیا مگر دوسری قوموں کے جو اثرات انکے ساتھ رہنے کے باعث ہمارے رہن سہن پر مرتب ہو چکے تھے ‘ انکا اثر زائل نہ ہو سکا۔ نتیجہ یہ نکلا کہ ان سے علےٰحدہ ہونے کے بعد بھی ان کے بہت سے رسم و رواج پاکستان میں منائے جانے لگے۔ ایسا ہی ایک رواج بسنت کا بھی ہے۔ بسنت کے موقع پر گڈے اور گڈیاں اڑائی جاتی ہیں۔ یہ گڈے کاغذ کے بنے ہوتے ہیں جنہیں پہلے پہل ایک دھاگے کی ڈوری کی مدد سے ہوا میں بلند کرکے فضا میں تیرایا جاتا تھا۔ مگر وقت کے ساتھ ساتھ اس چیز نے بھی ایک بھیانک روپ اختیار کر لیا۔ موجودہ حالات یہ ہیں کہ ایک دوسرے کی گڈی کاٹنے کے مقابلے میں انتہائی خطرناک اور نقصان دہ کیمیکلز سے ڈور یں تیار کی جاتی ہیں جو ڈور کی دھار کو تیز سے تیز تر تو بنا دیتے ہیں مگر ساتھ ہی ساتھ کئی معصوم جانوں کو نا قابلِ تلافی نقصان بھی پہنچا دیتے ہیں۔ یہ ڈور اس قدر تیز ہوتی ہے کہ اگر جسم کے کسی حصے پر چلکر اسے رگڑتی ہوئی گزر جائے تو اسے کاٹ ڈالتی ہے۔ یوں اکثر ایسا ہوتا ہے کہ کوئی بنا جانے دیکھے ڈور کھینچ لے اور وہ کسی راہ چلتے انسان کے گلے کو چھو جائے تو اسکی موت کا باعث بن جاتی ہے۔ بالکل اسی طرح اکثر یہ ڈوریں بجلی کی تاروں کو کاٹ دیتی ہیں اور جب وہ تار کٹ کر گرتی ہے تو اسکے نیچے سے گزرنے والے لوگ یا تو کرنٹ کی وجہ سے جل کر خاک ہو جاتے ہیں یا پھر انکو اپہج پن کا سامنا کرنا پڑ جاتا ہے۔ ایسے کئی واقعات منظرِ عام پر آ چکے ہیں۔گڈوں کے پیچھے بھاگنے والے کئی بچے بھی روڈ ایکسیڈنٹ کا شکار ہو جاتے ہیں۔ گورمنٹ بسنت منانے والوں کو کسی ایسی سزا سے دو چار کیوں نہیں کرتی کہ با قی سب نصیحت حاصل کریں اور آئندہ کیلئے یہ سب خطرات ختم کیے جا سکیں؟صرف ایک حکومتی نوٹس کیوں جاری کر دیا جاتا ہے جس پر کوئی خاص کاروائی عمل میں نہیں لائی جاتی؟ہم سب خود ہی اتنے غیر ذمہ دار کیوں ہیں کہ سب حادثات و خطرات کا علم ہونے کے باوجود بھی اس تہوار کو مناتے ہیں؟نقصان ہی نقصان!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *